;

١ . قسم ان کی جو دوڑتے ہیں سینے سے آواز نکلتی ہوئی (ف۲)

٢ . پھر پتھروں سے آگ نکالتے ہیں سم مارکر (ف۳)

٣ . پھر صبح ہوتے تاراج کرتے ہیں (ف۴)

٤ . پھر اس وقت غبار اڑاتے ہیں،

٥ . پھر دشمن کے بیچ لشکر میں جاتے ہیں،

٦ . بیشک آدمی اپنے رب کا بڑا ناشکرا ہے (ف۵)

٧ . اور بیشک وہ اس پر خود گواہ ہے،

٨ . اور بیشک وہ مال کی چاہت میں ضرور کرّا (تیز) ہے (ف۷)

٩ . تو کیا نہیں جانتا جب اٹھائے جائیں گے (ف۸) جو قبروں میں ہیں،

١٠ . اور کھول دی جائے گی (ف۹) جو سینوں میں ہے،

١١ . بیشک ان کے رب کو اس دن (ف۱۰) ان کی سب خبر ہے (ف۱۱)