;

١ . تباہ ہوجائیں ابولہب کے دونوں ہاتھ اور وہ تباہ ہوہی گیا (ف۲)

٢ . اسے کچھ کام نہ آیا اس کا مال اور نہ جو کمایا (ف۳)

٣ . اب دھنستا ہے لپٹ مارتی آگ میں وہ،

٤ . اور اس کی جُورو (ف۴) لکڑیوں کا گٹھا سر پر اٹھاتی،

٥ . اس کے گلے میں کھجور کی چھال کا رسّا، (ف۵)