;

١ . جب ہولے گی وہ ہونے والی (ف۲)

٢ . اس وقت اس کے ہونے میں کسی کو انکار کی گنجائش نہ ہوگی،

٣ . کسی کو پست کرنے والی (ف۳) کسی کو بلندی دینے والی (ف۴)

٤ . جب زمین کانپے گی تھرتھرا کر (ف۵)

٥ . اور پہاڑ ریزہ ریزہ ہوجائیں گے چُورا ہوکر

٦ . تو ہوجائیں گے جیسے روزن کی دھوپ میں غبار کے باریک ذرے پھیلے ہوئے

٧ . اور تین قسم کے ہوجاؤ گے،

٨ . تو دہنی طرف والے (ف۶) کیسے دہنی طرف والے (ف۷)

٩ . اور بائیں طرف والے (ف۸) کیسے بائیں طرف والے (ف۹)

١٠ . اور جو سبقت لے گئے (ف۱۰) وہ تو سبقت ہی لے گئے (ف۱۱)

١١ . وہی مقربِ بارگاہ ہیں،

١٢ . چین کے باغوں میں،

١٣ . اگلوں میں سے ایک گروہ

١٤ . اور پچھلوں میں سے تھوڑے (ف۱۲)

١٥ . جڑاؤ تختوں پر ہوں گے (ف۱۳)

١٦ . ان پر تکیہ لگائے ہوئے آمنے سامنے (ف۱۴)

١٧ . ان کے گرد لیے پھریں گے (ف۱۵) ہمیشہ رہنے والے لڑکے (ف۱۶)

١٨ . کوزے اور آفتابے اور جام اور آنکھوں کے سامنے بہتی شراب

١٩ . کہ اس سے نہ انہیں درد سر ہو اور نہ ہوش میں فرق آئے (ف۱۷)

٢٠ . اور میوے جو پسند کریں

٢١ . اور پرندوں کا گوشت جو چاہیں (ف۱۸)

٢٢ . اور بڑی آنکھ والیاں حوریں (ف۱۹)

٢٣ . جیسے چھپے رکھے ہوئے موتی (ف۲۰)

٢٤ . صلہ ان کے اعمال کا (ف۲۱)

٢٥ . اس میں نہ سنیں گے نہ کوئی بیکار با ت نہ گنہگاری (ف۲۲)

٢٦ . ہاں یہ کہنا ہوگا سلام سلام (ف۲۳)

٢٧ . اور دہنی طرف والے کیسے دہنی طرف والے (ف۲۴)

٢٨ . بے کانٹوں کی بیریوں میں

٢٩ . اور کیلے کے گچھوں میں (ف۲۵)

٣٠ . اور ہمیشہ کے سائے میں

٣١ . اور ہمیشہ جاری پانی میں

٣٢ . اور بہت سے میووں میں

٣٣ . جو نہ ختم ہوں (ف۲۶) اور نہ روکے جائیں (ف۲۷)

٣٤ . اور بلند بچھونوں میں (ف۲۸)

٣٥ . بیشک ہم نے ان عورتوں کو اچھی اٹھان اٹھایا،

٣٦ . تو انہیں بنایا کنواریاں اپنے شوہر پر پیاریاں،

٣٧ . انہیں پیار دلائیاں ایک عمر والیاں (ف۲۹)

٣٨ . دہنی طرف والوں کے لیے،

٣٩ . اگلوں میں سے ایک گروہ،

٤٠ . اور پچھلوں میں سے ایک گروہ (ف۳۰)

٤١ . اور بائیں طرف والے (ف۳۱) کیسے بائیں طرف والے (ف۳۲)

٤٢ . جلتی ہوا اور کھولتے پانی میں،

٤٣ . اور جلتے دھوئیں کی چھاؤں میں (ف۳۳)

٤٤ . جو نہ ٹھنڈی نہ عزت کی،

٤٥ . بیشک وہ اس سے پہلے (ف۳۴) نعمتوں میں تھے

٤٦ . اور اس بڑے گناہ کی (ف۳۵) ہٹ (ضد) رکھتے تھے،

٤٧ . اور کہتے تھے کیا جب ہم مرجائیں اور ہڈیاں ہوجائیں تو کیا ضرور ہم اٹھائے جائیں گے،

٤٨ . اور کیا ہمارے اگلے باپ دادا بھی،

٤٩ . تم فرماؤ بیشک سب اگلے اور پچھلے

٥٠ . ضرور اکٹھے کیے جائیں گے، ایک جانے ہوئے دن کی میعاد پر (ف۳۶)

٥١ . پھر بیشک تم اے گمراہو (ف۳۷) جھٹلانے والو

٥٢ . ضرور تھوہر کے پیڑ میں سے کھاؤ گے،

٥٣ . پھر اس سے پیٹ بھرو گے،

٥٤ . پھر اس پر کھولتا پانی پیو گے،

٥٥ . پھر ایسا پیو گے جیسے سخت پیاسے اونٹ پئیں (ف۳۸)

٥٦ . یہ ان کی مہمانی ہے انصاف کے دن،

٥٧ . ہم نے تمہیں پیدا کیا (ف۳۹) تو تم کیوں نہیں سچ مانتے (ف۴۰)

٥٨ . تو بھلا دیکھو تو وہ منی جو گراتے ہو (ف۴۱)

٥٩ . کیا تم اس کا آدمی بناتے ہو یا ہم بنانے والے ہیں (ف۴۲)

٦٠ . ہم نے تم میں مرنا ٹھہرایا (ف۴۳) اور ہم اس سے ہارے نہیں،

٦١ . کہ تم جیسے اور بدل دیں اور تمہاری صورتیں وہ کردیں جس کی تمہیں حبر نہیں (ف۴۴)

٦٢ . اور بیشک تم جان چکے ہو پہلی اٹھان (ف۴۵) پھر کیوں نہیں سوچتے (ف۴۶)

٦٣ . تو بھلا بتاؤ تو جو بوتے ہو،

٦٤ . کیا تم اس کی کھیتی بناتے ہو یا ہم بنانے والے ہیں (ف۴۷)

٦٥ . ہم چاہیں تو (ف۴۸) اسے روندن (پامال) کردیں (ف۴۹) پھر تم باتیں بناتے رہ جاؤ (ف۵۰)

٦٦ . کہ ہم پر چٹی پڑی (ف۵۱)

٦٧ . بلکہ ہم بے نصیب رہے،

٦٨ . تو بھلا بتاؤ تو وہ پانی جو پیتے ہو،

٦٩ . کیا تم نے اسے بادل سے اتارا یا ہم ہیں اتارنے والے (ف۵۲)

٧٠ . ہم چاہیں تو اسے کھاری کردیں (ف۵۳) پھر کیوں نہیں شکر کرتے (ف۵۴)

٧١ . تو بھلا بتاؤں تو وہ آگ جو تم روشن کرتے ہو (ف۵۵)

٧٢ . کیا تم نے اس کا پیڑ پیدا کیا (ف۵۶) یا ہم ہیں پیدا کرنے والے،

٧٣ . ہم نے اسے (ف۵۷) جہنم کا یادگار بنایا (ف۵۸) اور جنگل میں مسافروں کا فائدہ (ف۵۹)

٧٤ . تو اے محبوب تم پاکی بولو اپنے عظمت والے رب کے نام کی،

٧٥ . تو مجھے قسم ہے ان جگہوں کی جہاں تارے ڈوبتے ہیں (ف۶۰)

٧٦ . اور تم سمجھو تو یہ بڑی قسم ہے،

٧٧ . بیشک یہ عزت والا قرآن ہے (ف۶۱)

٧٨ . محفوظ نوشتہ میں (ف۶۲)

٧٩ . اسے نہ چھوئیں مگر باوضو (ف۶۳)

٨٠ . اتارا ہوا ہے سارے جہان کے رب کا،

٨١ . تو کیا اس بات میں تم سستی کرتے ہو (ف۶۴)

٨٢ . اور اپنا حصہ یہ رکھتے ہو کہ جھٹلاتے ہو (ف۶۵)

٨٣ . پھر کیوں نہ ہو جب جان گلے تک پہنچے

٨٤ . اور تم (ف۶۶) اس وقت دیکھ رہے ہو

٨٥ . اور ہم (ف۶۷) اس کے زیادہ پاس ہیں تم سے مگر تمہیں نگاہ نیں (ف۶۸)

٨٦ . تو کیوں نہ ہوا اگر تمہیں بدلہ ملنا نہیں (ف۶۹)

٨٧ . کہ اسے لوٹا لاتے اگر تم سچے ہو (ف۷۰)

٨٨ . پھر وہ مرنے والا اگر مقربوں سے ہے (ف۷۱)

٨٩ . تو راحت ہے اور پھول (ف۷۲) اور چین کے باغ (ف۷۳)

٩٠ . اور اگر (ف۷۴) دہنی طرف والوں سے ہو

٩١ . تو اے محبوب تم پر سلام دہنی طرف والوں سے (ف۷۵)

٩٢ . اور اگر (ف۷۶) جھٹلانے والے گمراہوں میں سے ہو (ف۷۷)

٩٣ . تو اس کی مہمانی کھولتا پانی،

٩٤ . اور بھڑکتی آگ میں دھنسانا (ف۷۸)

٩٥ . یہ بیشک اعلیٰ درجہ کی یقینی بات ہے،

٩٦ . تو اے محبوب تم اپنے عظمت والے رب کے نام کی پاکی بولو (ف۷۹)