;

١ . جب آسمان پھٹ پڑے،

٢ . اور جب تارے جھڑ پڑیں،

٣ . اور جب سمندر بہادیے جائیں (ف۲)

٤ . اور جب قبریں کریدی جائیں (ف۳)

٥ . ہر جان، جان لے گی جو اس نے آگے بھیجا (ف۴) اور جو پیچھے (ف۵)

٦ . اے آدمی! تجھے کس چیز نے فریب دیا اپنے کرم والے رب سے (ف۶)

٧ . جس نے تجھے پیدا کیا (ف۷) پھر ٹھیک بنایا (ف۸) پھر ہموار فرمایا (ف۹)

٨ . جس صورت میں چاہا تجھے ترکیب دیا (ف۱۰)

٩ . کوئی نہیں (ف۱۱) بلکہ تم انصاف ہونے کو جھٹلانتے ہو (ف۱۲)

١٠ . اور بیشک تم پر کچھ نگہبان ہیں (ف۱۳)

١١ . معزز لکھنے والے (ف۱۴)

١٢ . جانتے ہیں جو کچھ تم کرو (ف۱۵)

١٣ . بیشک نِکو کار (ف۱۶) ضرور چین میں ہیں (ف۱۷)

١٤ . اور بیشک بدکار (ف۱۸) ضرور دوزخ میں ہیں،

١٥ . انصاف کے دن اس میں جائیں گے،

١٦ . اور اس سے کہیں چھپ نہ سکیں گے،

١٧ . اور تو کیا جانیں کیسا انصاف کا دن،

١٨ . پھر تو کیا جانے کیسا انصاف کا دن،

١٩ . جس دن کوئی جان کسی جان کا کچھ اختیار نہ رکھے گی (ف۱۹) اور سارا حکم اس دن اللہ کا ہے،