;

١ . جب آسمان شق ہو (ف۲)

٢ . اور اپنے رب کا حکم سنے (ف۳) اور اسے سزاوار ہی یہ ہے،

٣ . اور جب زمین دراز کی جائے (ف۴)

٤ . اور جو کچھ اس میں ہے (ف۵) ڈال دے اور خالی ہوجائے،

٥ . اور اپنے رب کا حکم سنے (ف۶) اور اسے سزاوار ہی یہ ہے (ف۷)

٦ . اے آدمی! بیشک تجھے اپنے رب کی طرف (ف۸) ضرور دوڑنا ہے پھر اس سے ملنا (ف۹)

٧ . تو وہ وہ اپنا نامہٴ اعمال دہنے ہاتھ میں دیا جائے (ف۱۰)

٨ . اس سے عنقریب سہل حساب لیا جائے گا (ف۱۱)

٩ . اور اپنے گھر والوں کی طرف (ف۱۲) شاد شاد پلٹے گا (ف۱۳)

١٠ . اور وہ جس کا نامہٴ اعمال اس کی پیٹھ کے پیچھے دیا جائے (ف۱۴)

١١ . وہ عنقریب موت مانگے گا (ف۱۵)

١٢ . اور بھڑکتی ا ٓ گ میں جائے گا،

١٣ . بیشک وہ اپنے گھر میں (ف۱۶) خوش تھا (ف۱۷)

١٤ . وہ سمجھا کہ اسے پھرنا نہیں (ف۱۸)

١٥ . ہاں کیوں نہیں (ف۱۹) بیشک اس کا رب اسے دیکھ رہا ہے،

١٦ . تو مجھے قسم ہے شام کے اجالے کی (ف۲۰)

١٧ . اور رات کی اور جو چیزیں اس میں جمع ہوتی ہیں (ف۲۱)

١٨ . اور چاند کی جب پورا ہو (ف۲۲)

١٩ . ضرور تم منزل بہ منزل چڑھو گے (ف۲۳)

٢٠ . تو کیا ہوا انہیں ایمان نہیں لاتے (ف۲۴)

٢١ . اور جب قرآن پڑھا جائے سجدہ نہیں کرتے (ف۲۵) السجدة ۔۱۳

٢٢ . بلکہ کافر جھٹلا رہے ہیں (ف۲۶)

٢٣ . اور اللہ خوب جانتا ہے جو اپنے جی میں رکھتے ہیں (ف۲۷)

٢٤ . تو تم انہیں دردناک عذاب کی بشارت دو (ف۲۸)

٢٥ . مگر جو ایمان لائے اور اچھے کام کیے ان کے لیے وہ ثواب ہے جو کبھی ختم نہ ہوگا،