;

١ . بیشک تمہارے پاس (ف۲) اس مصیبت کی خبر آئی جو چھا جائے گی (ف۳)

٢ . کتنے ہی منہ اس دن ذلیل ہوں گے،

٣ . کام کریں مشقت جھیلیں،

٤ . جائیں بھڑکتی آگ میں (ف۴)

٥ . نہایت جلتے چشمہ کا پانی پلائے جائیں،

٦ . ان کے لیے کچھ کھانا نہیں مگر آگ کے کانٹے (ف۵)

٧ . کہ نہ فربہی لائیں اور نہ بھوک میں کام دیں (ف۶)

٨ . کتنے ہی منہ اس دن چین میں ہیں (ف۷)

٩ . اپنی کوشش پر راضی (ف۸)

١٠ . بلند باغ میں،

١١ . کہ اس میں کوئی بیہودہ بات نہ سنیں گے،

١٢ . اس میں رواں چشمہ ہے،

١٣ . اس میں بلند تخت ہیں،

١٤ . اور چنے ہوئے کوزے (ف۹)

١٥ . اور برابر برابر بچھے ہوئے قالین

١٦ . اور پھیلی ہوئی چاندنیاں (ف۱۰)

١٧ . تو کیا اونٹ کو نہیں دیکھتے کیسا بنایا گیا،

١٨ . اور آسمان کو کیسا اونچا کیا گیا (ف۱۱)

١٩ . اور پہاڑوں کو، کیسے قائم کیے گئے،

٢٠ . اور زمین کو، کیسے بچھائی گئی،

٢١ . تو تم نصیحت سناؤ (ف۱۲) تم تو یہی نصیحت سنانے والے ہو،

٢٢ . تم کچھ ان پر کڑ وڑا (ضامن) نہیں (ف۱۳)

٢٣ . ہاں جو منہ پھیرے (ف۱۴) اور کفر کرے (ف۱۵)

٢٤ . تو اسے اللہ بڑا عذاب دے گا (ف۱۶)

٢٥ . بیشک ہماری ہی طرف ان کا پھرنا (ف۱۷)

٢٦ . پھر بیشک ہماری ہی طرف ان کا حساب ہے،