;

١ . پڑھو اپنے رب کے نام سے (ف۲) جس نے پیدا کیا (ف۳)

٢ . آدمی کو خون کی پھٹک سے بنایا، پڑھو (ف۴)

٣ . اور تمہارا رب ہی سب سے بڑا کریم،

٤ . جس نے قلم سے لکھنا سکھایا (ف۵)

٥ . آدمی کو سکھایا جو نہ جانتا تھا (ف۶)

٦ . ہاں ہاں بیشک آدمی سرکشی کرتا ہے،

٧ . اس پر کہ اپنے آپ کو غنی سمجھ لیا (ف۷)

٨ . بیشک تمہارے رب ہی کی طرف پھرنا ہے (ف۸)

٩ . بھلا دیکھو تو جو منع کرتا ہے،

١٠ . بندے کو جب وہ نماز پڑھے (ف۹)

١١ . بھلا دیکھو تو اگر وہ ہدایت پر ہوتا،

١٢ . یا پرہیزگاری بتاتا تو کیا خوب تھا،

١٣ . بھلا دیکھو تو اگر جھٹلایا (ف۱۰) اور منہ پھیرا (ف۱۱)

١٤ . تو کیا حال ہوگا کیا نہ جانا (ف۱۲) کہ اللہ دیکھ رہا ہے (ف۱۳)

١٥ . ہاں ہاں اگر باز نہ آیا (ف۱۴) تو ضرور ہم پیشانی کے بال پکڑ کر کھینچیں گے (ف۱۵)

١٦ . کیسی پیشانی جھوٹی خطاکار،

١٧ . اب پکارے اپنی مجلس کو (ف۱۶)

١٨ . ابھی ہم سپاہیوں کو بلاتے ہیں (ف۱۷)

١٩ . ہاں ہاں، اس کی نہ سنو اور سجدہ کرو (ف۱۸) اور ہم سے قریب ہوجاؤ، (السجدة ۔۱۴)